202

Comment on منصف اعلی صاحب! ڈیم پر پہرہ مگر عدالتی فیصلوں پر؟ by Shirazi

آپ نے نہایت معقول تبصرہ کیا ہے۔ پانی جیسی بیش بہا نعمت کی ترسیل کی مد میں ہر کوشش قابل صد ستائش۔ انعام الہی بے شمار ہیں لیکن پانی کے ہم پلہ شاید ہی کوئی اور نعمت ہو کیونکہ دارومدار حیات ہی اس انمول نعمت پر ہے۔ عجیب بات ہے کہ سونے اور جواہر سے زیادہ قیمتی اس جنس کے ذاتی زندگی میں منصفانہ مصرف پہ نہ کسی دینی مدرسہ میں درس دی جاتی ہے اور کسی اور تعلیمی ادارے میں۔ ایک ایسے انتھک مہم کی اس وقت اشد ضرورت ہے جس میں ہر خاص و عام کو اس جنس نایاب کی اہمئیت اور عادلانہ استعمال سے روشناس کیا جا سکے۔ آیسی آگہی بنا بھلے ۂم پچاس ڈیم بنایں نتیجہ خیز نہ ہوںگے اگر عوام و خواص کو پانی کی قدرو قیمت سے آگاہ نہ کیا گیا تو تمام تر کوششوں کے بے نتیجہ ہونے کا قوی امکان ہے۔ جہاں تک عزت مآب چیف جسٹس کی اس مد میں کوششوں کا تعلق ہے وہ نہایت قابل ستائش ہیں ہاں مگر آپکا نظام عدل میں بہتری کی تجویز بھی قابل توجہ ہے۔ نہ پانی کے بغیر زندگی کا کوئی امکان نہ عدل کے بنا معاشرے کا تصور ممکن۔۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں