316

سجاول کے نواحی گاؤں میں نوجوان کی مبینہ خود سوزی کا معاملہ ۔جانچ ٹیم نے تحیقات مکمل کرکے 2 خواتین سمیت چار افراد کو وسیم اوٹھار کے قتل میں ملوث قرار دیکر ایک خاتون سمیت دو ملزماں کی گرفتاری

سجاول کے نواحی گاؤں سلیمان اوٹھار میں دو دن قبل وسیم ولد اسماعیل اوٹھارکی مبینہ خود سوزی کے معامرے کے بعد متوفی کے ورثہ کی جانب سے قتل کا شک ظاہر کرنے کے بعد جوڑی گئی جانچ ٹیم نے اپنی تحیقات مکمل کرکے 2 خواتین سمیت چار افراد کو وسیم اوٹھار کے قتل میں ملوث قرار دیکر جوابدار خاتون ذولیخاں اور شمن اوٹھار کو گرفتار کر لیا گیا ہے اس سلسلہ میں جوڑی گئی جانچ ٹیم کے سربراہ ‏DSP‏ سجاول منظور حسین کھوسو اور جانچ ٹیم کے ایس ایچ او سجاول شفیع گولو،‏ایس ایچ او چوہڑ جمالی مشتاق برہمانی،ایس ایچ او جاتی ممتاز علی نے گرفتار دو جوابداروں کے ہمراھ ڈی ایس پی سجاول آفیس میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ایس ایس پی سجاول فدا حسین جانوری کی خاص ہدایات پر جوڑی گئی جانچ ٹیم نے قتل کو خود سوزی کا رنگ دینے والے معامرہ کی تحقیقات مکمل کرکے اس نتیجہ پر پہنچی کے متوفی وسیم نے آپگہات نہیں کی تھی بلکہ اسکو چار افراد نے ایک سازش کے تحت قتل کرکے قتل کو خود سوزی کا رنگ دیا گیا تھا جبکہ اس دوران ایس ایچ او سجاول شفیع محمد گولو کا مزید کہنا تھا کہ متوفی وسیم اوٹھار کے بہائی دودو اوٹھار کی فریاد پر دو خواتین سمیت چار افراد کیخلاف سجاول تہانہ پر قتل کا مقدمہ درج کرکے پولیس نے دو جوابدار شمن اوٹھار اور مسمات ذولیخاں کو گرفتار بھی کیا گیا ہے جبکہ بقایہ دو فرار جوابداروں کی تلاش جاری ہے جنکو تمام جلد گرفتار کرکے قانون کے کٹہرے میں کہڑہ کرکے متوفی کے ورثہ سے انصاف کیا جائیگا-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں