458

سجاول:میڈیکل داخلہ کی پری انٹری ٹیسٹ کا پرچہ من پسند طلبہ میں آوٹ کرکے نشستوں کو فروخت پر میڈیکل کے طلبہ کا این ٹی ایس کیخلاف سجاول میں احتجاجی ریلی

سندھ میڈیکل یونیوسٹی بھر کے میڈیکل کالجز میں داخلوں کے حوالے سے منعقدہ NTS کے تحت ہونے والے پری انٹری ٹیسٹ کا پرچہ منپسند طلبہ میں آوٹ کرنے پرمیڈیکل کے طلبہ کا این ٹی ایس حکام کیخلاف سجاول میں ہریش کمار,کرشن کمار,یاسر میمن,لالا یاسر,حسنین شاہ,سنی دیوان و دیگر کی قیادت میں درجنوں اسٹوڈنٹس نے ماموں لاڈو چوک سے پریس کلب سجاول تک احتجاجی ریلی نکال مظاہرہ کرکے سخت نعریبازی کی گئی اس موقع پر طلبہ کا کہنا تہا کہ سندھ میڈیکل یونیوسٹی بھر کے میڈیکل کالجز میں داخلوں کے حوالے سے منعقدہ NTS کے تحت ہونے والے پری انٹری ٹیسٹ کے پرچہ مبینہ بہاری رقم کی وصولی کے بعد من پسند طلبہ میں پرچہ آوٹ کرکے نشستوں کو فروخت کرنا میریٹ کا قتل عام اور غریب ہوشیار و ذہن طلبہ سے بیحد ظلم زیادتی و نا انصافی ہے جس رشوت ستانی ٹیسٹ کو رد کرتے ہیں ان کا کہنا تھا کہ سندھ بھر کے میڈیکل کالجز میں داخلوں کے عمل کو صاف و شفاف بنانے کے بجائے سیاست و کرپشن کے پروان چڑہانے اور سندھ بھر کے سرکاری کالجز و اسکولوں کی تباہ حالی سے سارا سندھ واقف ہی تھا اور اب پروفیشنل میڈیکل کالجز کے پری انٹری ٹیسٹ کے پرچے کا آوٹ ہونا انتہائی تشویش ناک بات ہے،جو کے شعبہ تعلیم سندھ اور اس کے ماتحت کام کرنے والے دیگر شعبوں کی نااہلی اور جاری کرپشن کے ساتھ ساتھ تعلیم و علم دشمنی کا واضح ثبوت ہے،انہوں نے حکام بالا سے مطالبہ کرتے ہوئے زور دیا کے صوبہ سندھ سمیت پاکستان بھر میں تعلیمی ایمرجنسی نافذ کرکے معیار تعلیم کو بلند کیا جائے،اور اساتذہ و طلباء کو سھولیات فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ رشوت ستانی ٹیسٹ واقعے کی صاف شفاف،مکمل اور غیر جانبدارانہ انکوائیری کرواکے مایوس طلبہ کو فوری انصاف فراہم کروایا جائے اور داخلوں کے عمل کو مکمل شفاف بنانے سمیت شعبہ تعلیم سندھ اور اس سے وابستہ شعبوں کی جانب سے کی جانی والی کرپشن اور نااہلی کو ختم کرکے معیاری تعلیم کو صاف و شفاف بنایا جائے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں