191

گیڈر سینگھی
گیدڑ ر سینگھی دراصل گیدڑ کے سر میں نکلنے والی ایک رسولی یا پھوڑا ہوتا ہے جو کہ اسکے سر میں اپنی شاخیں پھیلاتا ہے اور ایک خاص حد تک بڑا ہونے کے بعد خود بخود جھڑ کر گر جاتا ہے اور کہا جاتا ہے گرنے کے بعد بھی اس میں جان ہوتی ہے اور اسکے بال بڑھتے رہتے ہیں جنکی خاص تراش خراش کی جاتی ہے.
گرنے کے بعد کمزور عقیدہ والوں کو قابو کرنے کیلئے جادو ٹونے کرنے والے اسے اٹھا کر لے جاتے ہیں اور اپنے خاص مقاصد کے لیے استعمال کرتے ہیں.
سنا ہے کہ اسے سندور میں ہی رکھا جاتا ہے ورنہ اسکی بڑھوتری ختم ہوجاتی ہے یہاں تک کہ یہ مر جاتا ہے.
میرے ناقص علم کے مطابق یہ نر اور مادہ حالتوں میں ہوتا ہے.
جادوگروں کے پاس شوہر یا محبوب یا سسرال والوں کو قابو کرنے کے خواہش مند خصوصاً محبت کا حصول چاہنے والے مرد و زن جب آتے ہیں تو انہیں ایک مخصوص رقم کے عوض یہ گیدڑ سنگهی دی جاتی ہے، گیدڑ سنگہی کی ہمیشہ جوڑی ( نر اور مادہ ) ایک ساتھ رکھی جاتی ہے ورنہ بقول ان لوگوں کے یہ کام نہیں کرتی اور بے کار ہوجاتی ہے.
اسکے علاوہ چند بدبخت لوگ اسے شوقیہ گھر میں خیر و برکت کے لیے ، روزگار کے حصول کے لئے، دولت میں اضافے کے لئے خریدتے رکھتے ہیں.
اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ جو لوگ گیدڑ سنگھی جیسی عجیب الخلقت چیز کو لوگوں کو فروخت کرتے ہیں وہ بھی اس دعوے سے کہ اسے رکھنے سے آپکے معاشی مسائل دور ہوں گے اور آپ کے گھر روپے پیسے کی ریل پیل ہوگی تو کیا ان لوگوں کے اپنے حالات بدل چکے ہوتے ہیں اور کیا شاہانہ زندگی گزار رہے ہوتے ہیں کیونکہ انکے پاس تو بیچنے کیلئے کافی جوڑیاں ہوتی ہیں.
خدارا جہالت سے بچو کیونکہ تم اللہ کے ہوتے ایک ڈرپوک جانور کے جسم سے خارج ہوئے پھوڑے کو اپنا مشکل کشا مان کے شرک کررہے ہو

اللہ ہم سب کو شرک سے بچنے اور صراط مستقیم پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے آمین

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں